کیونوس کوائن

 

 CSC  Int. GmbH 

Switzerland

کیونوس کوائن

اوورویو

ایک خالصتا پیر ٹو پیر الیکٹرانک پے منٹ کا طریقہ جہاں آپ براہِ راست ایک پارٹی سے دوسری پارٹی کو رقم منتقل کرسکتے ہیں اور اس میں کسی تیسری فنانشل پارٹی کا عمل دخل نہیں ہوگا۔ ڈیجٹل دستخط بے شک اسکا اہم حصہ ہیں لیکن اگر ڈبل ٹرانسفر کو روکنے کے لیئے کسی تیسری پارٹی کی ضرورت ہو تو اسکے اہم فوائد کھو جاتے ہیں۔ ہم ڈبل اسپینڈنگ کی مشکل کا ایک حل پیر ٹو پیر نیٹ ورک کے طور پر پیش کرتے ہیں۔ نیٹ ورک ٹائم سٹیمپ ٹرانزیکشز کی جو چین بنتی ہے اسکےریکارڈ کو تبدیل نہیں کیا جاسکتا۔ چین کو دوبارہ تبدیل کرنے کے لیئے آپکو دوبارہ ریکارڈ بنانا ہوگا۔ سب سے لمبی چین نہ صرف ثبوت کے طور پر کام کرتی ہے بلکہ اس بات کا بھی ثبوت ہوتی ہے کہ یہ سی پی یو پاور کے سب سے لمبے پول سے آئی ہے۔ جب تک سی پی یو کی پاورکو نوڈز نے قابو کیا ہوا ہے نیٹ ورک پر حملہ نہیں ہوسکتا ۔ نیٹ ورک کو صرف ایک چھوٹے اسٹرکچر کی ضرورت ہوتی ہے۔ پیغامات کی منتقلی بہترین طریقے سے کی جاتی ہے اور نوڈز میں یہ طاقت ہے کہ وہ نیٹ ورک چھوڑ سکتے ہیں اور دوبارہ داخل بھی ہوسکتے ہیں، یہ نوڈز حملہ آوروں سے زیادہ تیزرفتاری سے کام کرتے ہیں

انکا الگوریدم بٹ کوائن سے ملتا جلتا ہے۔

۱۶۸۰۰سکے منتقل کردیئے گئے ہیں اور ۴۸۰۰سکے مزید پوری دنیا میں لوگوں کو منتقل کردیئے جائیں گے۔

کونوس کوائن کے بیچ میں کوئی تیسرا آدمی نہیں ہے لیکن آپکو ہر موقعے پر آپکی راہنمائی کے لیئے ایک پیشہ ورانہ ٹیم موجود رہے گی تاکہ آپکو مستقبل میں مسئلہ نہ ہو۔


ٹرانزیکشن

ہم ایک الیکٹرک کوائن کو ڈیجیٹل دستخط کے طور پر متعارف کروایا ہے۔ ہر مالک سکے کو ڈیجیٹل ہیش پر دستخط کرکہ فروخت کرتا ہے اور اگلی لین دین تک یہ نئے مالک کے پاس ہی رہتا ہے۔ دستخط کی تصدیق کر کہ آپ رسید کی تصدیق کر سکتے ہیں اور اسطرح نئے مالک تک پہنچ سکتے ہیں۔

لیکن اگر مالک نے سکے کی نقل تیار کی ہوئی ہے تو مسئلہ درپیش آسکتا ہے۔ اسکا ایک معیاری حل یہ ہے کہ ہر ٹرانزیکشن کی جانچ کر لیں۔ اسکا حل یہ ہے ایک منٹ متعارف کروایا جائے جو کہ ہر خریدوفروخت پر نظر رکھے اور ڈبلنگ سے آپکو بچائے۔ اس حل کے ساتھ مسئلہ یہ ہے منٹ کو چلانے کے لیئے ایک کمپنی درکار ہے جو کہ آپکی ہر لین دین پر بینک کی طرح نظر رکھے گی۔

ہمیں نئے خریدار کو اس بات پر مطمئن کرنا ہے کہ یہ سکہ اب اسکا ہے اور پچھلی خرید سے اسکا کچھ لینا دینا نہیں۔ اس مقصد کے لیئے پہلی خرید معنی رکھتی ہے ار اسی کو گردانا جائے گا۔ اس تمام لین دین کی تصدیق کا ایک ہی حل ہے منٹ جو کہ ساری لین دین پر نظر رکھے گا اور پھر طے کرے گا کونسی لین دین پہلے ہوئی۔

اسکو کسی تیسری پارٹی کے بغیر کرنے کا ایک ہی طریقہ ہے کہ لین دین کو پبلک کردیا جائے۔ ٹرانزیکشن سے پہلے نوڈز کی اکثریت اگر اس کو پاس کرے تو یہ پاس ہوگی۔

 

ٹائم سٹیمپ سرور

 

جو حل ہم نے پیش کیا ہے ٹائم سٹیمپ سرور سے شروع ہوتا ہے، ایک ٹائم سٹیپم سرور بلکل اسی طرح کام کرتا ہے جیسے کہ اخبار یا یوزنیٹ پوسٹ کام کرتے ہیں۔ ٹائم سٹیمپ اس بات کو ثابت کرتا ہے کہ ڈیٹا اس وقت یہاں موجود تھا اسکے سوا اسکو آگے نہیں بھیجا جائے گا۔ ہر ٹائم سٹیمپ میں پچھلی ٹائم سٹیمپ موجود ہوتی ہے جسکی وجہ سے یہ سب مضبوط ہوتی ہیں اور ایک چین بنتی ہے۔


کام کا ثبوت

پیر ٹو پیر ڈسٹری بیوٹر سسٹم کو چلانے کے لیئے ہم کام کا ثبوت استعمال کرتے ہیں بلکل ایڈم بیک ہیش سسٹم جیسا بجائے کہ ہم اخبار یا یوزنیٹ پوسٹ استعمال کریں۔ کام کا ثبوت وہاں سے شروع ہوتا ہے جہاں سے یہ ہیش ہوا تھا جیسے کہ SHA-256، ہیش صفر بٹس سے شروع ہوگا۔ اوسط کام میں صفر بٹس کی متوقع تعداد ہی چاہیے ہوگی اور اسکی تصدیق ایک اکلوتے ہیش سے کی جا سکے گی۔ ہمارے ٹائم سٹیمپ نیٹ ورک کے لیئے، ہم کام کے ثبوت کواس وقت تک لاگو کرتے ہیں جب تک ہمیں مطلوبہ صفر بٹس نہ مل جائیں۔ ایک دفعہ سی پی یو میں ڈالنے کے بعد اسکو اسکو تبدیل کرنے کے لیئے بلاک کو تبدیل کرنا پرے گا ، چونکہ تمام بلاکس ایک دوسرے کے ساتھ منسلک ہیں اسلیئے صرف ایک کو تبدیل کرنا ممکن نہیں۔ کام کا ثبوت ووٹنگ کے مسئلے کو بھی حل کرتا ہے۔ چونکہ یہ ایک آئی پی ایک ووٹ کا اصول تھا تو ووٹنگ سسٹم ایک ایسے شخص کی وجہ سے متاثر ہوسکتا تھاجو کہ بہت سے آئی پی محفوظ رکھتا ہو۔ اس سسٹم میں آپ ایک آئی پی سے ایک ووٹ ڈال سکتے ہیں۔اگر سی پی یو کی اکثریت نوڈر کے ذریعے سے قابو کی جاتی ہوتو سیدھی چینز تیزی سے بڑھیں گی اور متقابلہ چیز اس پر منحصر ہوں گی۔ اٹیکر کو ایک چین کو تبدیل کرنے کے لیئے کام کے ثبوت کو دوبارہ سے بنانا ہوگا اور نوڈز کو بھی اوورٹیک کرنا ہوگا جو کہ اتنا آسان نہیں ہے۔ یہ ہم بعد میں دکھائیں گے کہ جتنے زیادہ بلاکس ہوں گے حملہ آور اتنا ہی سست ہوگا کام کے ثبوت کی مشکلات کا اندازہ بلاکس کی اوسط حرکت سے لگایا جاتا ہے یہ جتنی جلدی بڑھتے ہیں مشکلات بھی اتنی ہی بڑھتی ہیں

 

نیٹ ورک

 

نیٹ ورک کو چلانے کے اقدام مندرجہ ذیل ہیں

  1. نئی ٹرانزکشنز تمام نوڈز پر نشر کی جاتی ہیں
  2. ہر نوڈ بلاک سے نئ ٹرانزیکشن کو کو اکٹھا کرتی ہے
  3. ہر نوڈ اپنے بلاک سے کام کا ثبوت ڈھونڈنے کے لیئے کام کررہی ہے
  4. جب ایک نوڈ کو کام کا ثبوت ملتا ہے تو وہ بلا ک کی تمام نوڈز کو بھیج دیتی ہے
  5. نوڈ بلاک کو صرف تب مانتی ہے جب اس میں موجود لین دین پہلے بھی نہ بھیجی جاچکی ہو
  6. نوڈز چین میں نئے بلاکس کو بنا کر اس کے بارے میں اپنی رضامندی کا اطہار کرتے ہیں۔ نئے بلاک کا ہیش استعمال کرکے بلکل پرانے کی طرح

نوڈ ہمیشہ یہی سمجھتی ہے کہ سب سے لمبی چین سب سے صحیح ہے اور وہ اسی کو بڑھانے کے لیئے کام کرتی ہے۔ اگر دو نوڈز کو اگلے بلاک میں منتقل کیا جائے تو کچھ نوڈز ایک یا دوسرا ورژن حاصل کرتی ہیں۔ چین نئے کام کے ثبوت کے ساتھ ٹوٹ جاتی ہے۔ لیکن برانچ لمبی ہوتی جاتی ہے۔ جیسے جیسے انہیں زیادہ بوڈز ملتی جاتی ہیں وہ ایک بلاک بنا لیتی ہیں۔ گمشدہ پیغامات بھی آپکو مل جائیں گے۔ اگر کسی نوڈ کو بلا ک نہین مل رہا تو اسکو درخوست بھیج دے گی جیسے ہی اسکو وہ ملے گا تو وہ گمشدہ بلاک کو پہچان لے گی۔